سرفراز احمد باہر ۔۔ٹیم کی قیادت کس کھلاڑی کو سونپ دی گئی؟ شائقین کرکٹ کیلئے بڑی خبر آگئی

ابوظہبی (نیوزڈیسک) سرفراز احمد ابوظہبی ٹیسٹ سے باہر ہو گئے، دوسرے ٹیسٹ میچ کے پہلے روز دوران بیٹنگ ہاتھ پر گیند لگنے کے باعث قومی ٹیم کے کپتان زخمی ہوگئے، اسد شفیق کو کپتانی کے فرائض سونپے جائیں گے۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان ابوظہبی ٹیسٹ کے پہلے روز کے کھیل کے اختتام پر قومی ٹیم کیلئے بہت بری خبر سامنے آئی ہے۔قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد زخمی ہو جانے کے باعث ابوظہبی ٹیسٹ سے باہر ہوگئے ہیں۔ اس حوالے سے سرفراز احمد نے بتایا ہے کہ ابوظہبی ٹیسٹ کے پہلے روز دوران بیٹنگ گیند لگنے کے باعث ان کا ہاتھ زخمی ہوگیا ہے۔ مچل اسٹارک کی گیند لگنے کے بعد سے ان کے ہاتھ میں بہت درد ہے اس لیے ممکنہ طور پر وہ ابوظہبی ٹیسٹ میں مزید شرکت نہیں کر پائیں گے۔سرفراز احمد نے بتایا ہے کہ ان کی جگہ رضوان احمد وکٹ کیپنگ کریں گے۔جبکہ قومی ٹیم کے نائب کپتان اسد شفیق کپتانی کے فرائض انجام دیں گے۔ اس سے قبل شیخ زید سٹیڈیم،ابوظہبی میں کھیلے جانے والے ٹیسٹ میں قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تو ٹیسٹ ڈیبیو کرنےوالے فخر زمان اور محمد حفیظ نے اننگز کا آغاز کیا۔محمد حفیظ4رنز بنا کر مچل سٹارک کا نشانہ بن گئے ،اظہر علی اور فخر زمان نے دوسری وکٹ کے لیے52رنز کا اضافہ کیا جس کے بعد اظہر علی 15رنز بنا کر نیتھن لیون کی گیند پر انہی کو کیچ تھما بیٹھے، اگلی گیند پر لیون نے حارث سہیل کو چلتا کیا جب کہ اپنے اگلے اوور میں اسد شفیق اور بابر اعظم کو بھی کوئی رن بنانے کا موقع دیئے بغیر پوویلین بھیجا۔تجربہ کار کھلاڑیوں کے آؤٹ ہونے کے بعد اپنا پہلا میچ کھیلنے والے فخر زمان اور کپتان سرفراز احمد نے ٹیم کو سہارا دیا اور147 رنز کی شراکت قائم کی۔فخر زمان نروس نا ئننٹیز کا شکا ر ہوتے ہوئے94رنز پر پوویلین لوٹے ۔ بلال آصف12رنز بنا کر پوویلین لوٹے جبکہ کپتان سرفراز احمدنے94رنزبنانے کے بعد غیر ذمہ درانہ شاٹ کھیل کر وکٹ گنوائی ،یاسر شاہ 28رنز کی عمدہ باری کھیل کر مچل مارش کی گیند پر بولڈ ہوئے جبکہ محمد عباس10رنز بنا کر سٹارک کی گیند پر بولڈ ہوئے۔آسٹریلیا کیلئے لیون نے 4، لبسچینکی نے3اور سٹارک نے دو وکٹیں حاصل کیں،ایک وکٹ مچل مارش کو ملی ۔ آسٹریلیا کیلئے عثمان خواجہ اور ایرون فنچ نے اننگز کا آغاز کیا ،فاسٹ باؤلر محمد عباس نے پہلے 3رنز پر عثمان خواجہ کو پوویلین بھیجا اور پھر دن کی آخری گیند پر پیٹر سڈل کی بھی وکٹ حاصل کی ۔قومی سکواڈ سرفراز احمد( کپتان اور وکٹ کیپر)، اسد شفیق، محمد حفیظ، اظہر علی، حارث سہیل، بابراعظم، فہیم اشرف، بلال آصف، محمد عباس، محمد رضوان، عثمان صلاح الدین، وہاب ریاض، یاسر شاہ، میر حمزہ اور شاداب خان شامل ہیں۔پاکستانی ٹیم کو اوپننگ بیٹسمین امام الحق کی خدمات حاصل نہیں ہوں گی، وہ انگلی کی سرجری کے باعث آخری ٹیسٹ سے باہر ہو گئے ہیں ،جس کے بعد فخر زمان کو آسٹریلیا کے خلاف ڈیبیو کرایا گیا ہے جب کہ وہاب ریاض کی جگہ میر حمزہ کو ٹیسٹ کیپ دی گئی ہے ، شاداب خان کو 12ویں کھلاڑی کی حیثیت سے ٹیم میں شامل کیا گیا ہے،آسٹریلیا نے دبئی ٹیسٹ کی پلیئنگ الیون کو برقرار رکھا ہے۔دونوں ٹیمیں میچ جیت کر سیریز اپنے نام کرنے کیلئے پر جوش ہیں، دونوں ٹیموں کے درمیان پہلا ٹیسٹ سنسنی خیز مقابلے کے بعد ہار جیت کے فیصلے کے بغیر ختم ہوگیا تھا، پہلے ٹیسٹ میں زبردست مقابلے کے بعد اب دونوں ٹیمیں دوسرا اور آخری ٹیسٹ جیت کر سیریز اپنے نام کرنے کیلئے پر جوش دکھائی دے رہی ہیں اور اسی لئے دونوں ٹیموں کے درمیان کانٹے دار مقابلے کی توقع کی جا رہی ہے۔ دونوں ٹیموں کے درمیان 1956ءسے اب تک مجموعی طور پر 63 میچز کھیلے جا چکے ہیں جن میں سے آسٹریلیا نے 31 جیتے جبکہ پاکستانی ٹیم 14 میں کامیاب رہی، 18 میچز ڈرا ہوئے۔ ٹیسٹ سیریز کے بعد دونوں ٹیموں کے درمیان تین ٹی ٹونٹی میچوں کی سیریز کھیلی جائے گی۔

- Advertisement -

You might also like

- Advertisement -