جبکہ دوسری جانب پنجاب اسمبلی توڑنے کی سمری پر دستخط اور نگران سیٹ کے حوالےسے اہم ترین پیش رفت بھی سامنے آگئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق پنجاب حکومت آج رات مکمل تحلیل ہو جائے گی۔  گورنر پنجاب  کی جانب سے آج شام تک سمری کو منظور کر لیا جائے گا ۔ پرویز الہی کے نگران وزیراعلی کا نوٹیفیکشن جاری ہو گا ۔ اس حوالے سے گورنر پنجاب  بلیغ الرحمن نے قانونی ماہرین سے مشاورت مکمل کر لی ہے۔

لاہور ایکسپو سنٹر میں ایک نمائش کے افتتاح کے موقع پر میڈیا سے بات چیت  کرتے ہوئے  گورنر  پنجاب بلیغ الرحمان کا کہنا تھا کہ اسمبلی تحلیل کا فیصلہ مشکل ہے۔ میں نے اگلے 2 دنوں میں اسمبلی کی تحلیل کا فیصلہ کرنا ہے۔ایڈوائس منظور کرتے ہی اسمبلی تحلیل ہوجائے گی۔

بلیغ الرحمان نےمزید  کہا کہ ابھی یہ بھی دیکھنا ہے کہ 90 دنوں میں انتخابات کیسے ہونے ہیں۔کیونکہ اس عرصہ کی تکمیل تو رمضان المبارک میں آرہی ہے۔صورتحال کاجائزہ لینا ہے۔تاہم سب کچھ  آئین کے مطابق ہوگا۔اپوزیشن اور حکومتی گروپ کو مل کر 3 روز میں نگران وزیر اعلی  اور دیگر سیٹ اپ کے بارے میں بھی فیصلہ کرنا ہے۔دو روز میں ساری صورتحال واضح ہوجائے گی۔اسمبلیوں کی تحلیل قانونی اور آئینی مسئلہ ہے اسے عین قانون اور آئین کے مطابق طے کریں گے۔

وزیراعلی پنجاب کے پرنسپل سیکرٹری سے سرکاری سطح پر وزیر اعلی پنجاب کی سمری کی تصدیق کروائی گئی ۔وزیراعلی پنجاب کی جانب سے جاری سمری گذشتہ رات ساڑھے دس بجے گورنر پنجاب کو پیش کی گئی تھی۔ گورنر پنجاب پنجاب اسمبلی کی تحلیل کا گزٹ نوٹیفیکشن جاری کریں گے۔

واضح رہے کہ گورنر پنجاب نے رات کو ہی سمری موصول ہونے کی تصدیق کردی تھی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں