مسلم لیگ ن کے مرکزی سیکرٹری جنرل احسن اقبال کی نارووال میں میڈیا سے گفتگو ،

0 17

لیگی رہنما کا مزید کہنا تھا کہ دوسری طرف صدارتی آرڈیننس سپریم کورٹ کی آزادی پر بھی بدترین حملہ ہے حکومت چند روز پہلے سینٹ اوپن الیکشن کے حوالے سے قومی اسمبلی میں آئینی ترمیمی بل پیش کر چکی ہے ۔ حکومت کی طرف سے بل پیش کئے جانے کا مطلب ہے سینٹ سینٹ کے انتخابات کا طریقہ کار آئین میں ترمیم کے بغیر نہیں ہو سکتا ،،،حکومت خود اعتراف کر چکی ہے آئینی ترمیمی بل پیش کرکے ۔ سینٹ کے طریقہ کار کو بدلنے کیلئے ترمیم ضروری ہے ،،،، حکومت نے رات کے اندھیرے میں صدارتی آرڈیننس جاری کیا ،،،حکومت پاکستان کے آئین میں صدارتی آرڈیننس کے ذریعے تبدیلی لے کر آئی ،،احسن اقبال کا مزید کہنا تھا کہ ،،،، صدارتی آرڈیننس پاکستان کے آئین کو مسخ کرنے کا بہانک حملہ ہے ،،،کل کو حکومت صدارتی آرڈیننس کے ذریعے 18 ترمیم کو بھی رول بیک کرنے کا اعلان بھی کر سکتی ہے

Leave A Reply

Your email address will not be published.