جیب میں نہیں دھیلا، دیکھنے چلے ہیں میلا۔۔۔۔۔ فیاض الحسن چوہان نے ایک اور متنازعہ بیان داغ دیا

لاہور،25 اکتوبر(سٹار ایشیا نیوز اسپیشل) صوبائی وزیر اطلاعات و ثقافت فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ حمزہ شہباز کی عمران خان، پرویز الٰہی اور مجھے اخلاقیات پر نصیحتیں دراصل جیب میں نہیں دھیلا،دیکھنے چلے میلہ کے مترادف ہیں۔ خود ان کی جیب میں شرافت، دیانت، اخلاقیات گڈ گورننس کا کوئی دھیلا نہیں ہے۔ حمزہ شہباز اوران کے والدجمہوریت کا لبادہ اوڑھ کے پرائیوٹ لمیٹڈ کمپنی چلا رہے ہیں۔وہ آج یہاں پنجاب اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ ان کا کہنا تھا کہ ن لیگ کے اراکین اسمبلی کو میرا شکر گزار ہونا چاہیے کہ میری پانچ دن کی لگاتار پندو نصائح کا ان کے قائد پر اتنا اثر تو ہوا ہے کہ وہ اب شام پانچ بجے کے بجائے دوپہر تین بجے آکر بیٹھ جاتے ہیں۔ اور ان اسمبلی اراکین کے لئے کل دریاں بھی آ گئیں ہیں ورنہ بیچارے سیڑھیوں پر خوار ہو رہے تھے۔ حمزہ شہباز کو میں بار بار یہ کہتا ہوں کہ وہ آ ئیں اور بزنس ایڈوائزری کمیٹی میں شامل ہوں اور بطور اپوزیشن اپنی آئینی ذمہ داری نبھائیں۔ فیاض چوہان کا کہنا تھا کہ حمزہ شہباز کو شرم آنی چاہیے کہ وہ وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار جیسے شائستہ انسان کے بارے میں توہین آمیز زبان اختیار کرتے ہیں اور آگے سے سے پرویز الٰہی صاحب کے بارے میں کہتے ہیں کہ وہ بازاری زبان استعمال کرتے ہیں۔صوبائی وزیر کا مزید کہنا تھا کہ چار روز بعد جو آل پارٹیز کانفرنس ہو رہی ہے وہ دراصل آل پاکستان لوٹ مار ایسوسی ایشن کانفرنس ہے۔ میں آج اس پلیٹ فارم سے اپنے قائد عمران خان کو خراج تحسین پیش کرنا چا ہوں گا جنہوں نے کل یہ کہہ دیا ہے کہ آل پاکستان لوٹ مار ایسوسی ایشن کی کسی قسم کی بلیک میلنگ قبول نہیں کریں گے۔ ن لیگ یہ سمجھ لے کہ اب آپ چاہے کنٹینروں پر چڑھیں، کھمبوں پر چڑھیں یا کے ٹو کے پہاڑ پر چڑھ جائیں، آل پاکستان لوٹ مار ایسوسی ایشن کا اجلاس بلائیں یا یونائیٹڈ نیشنز کا،بے باک اور بے لاگ احتساب ہر صورت ہو گا۔
اشتہارات سے متعلق ایک سوال پر فیاض الحسن چوہان کا کہنا تھا کہ حکومت کی طرف سے میڈیا کو اشتہارات کی کوئی بندش نہیں ہے محکمہ اطلاعات اور ڈی جی پی آر کی جانب سے روزانہ کی بنیاد پر اشتہارات کی ترسیل جاری ہے۔ بجلی کے نرخوں میں اضافے سے متعلق سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ہم نے کسانوں کے لئے بجلی پچاس فیصد سستی کر دی ہے جو ماضی میں کبھی نہیں ہوا۔

- Advertisement -

You might also like

- Advertisement -