کراچی میں آن لائن ٹیکسی سروس پر پابندی : سندھ حکومت نے شہریوں کو قاتل سواری استعمال کرنے کی اجازت دی، ڈبیلو گیارہ نہیں بلکہ۔۔۔۔۔۔ ایسی خبر کہ سارا شہر سندھ حکومت کے خلاف ہوگیا

کراچی(سٹار ایشیا نیوز اسپیشل) حکومت سندھ نے صوبائی دارالحکومت کراچی میں چنگچی رکشے قانونی طور پر چلانے کی اجازت دے دی ہے۔ جس پر عوامی حلقے بھرپور احتجاج کر رہے ہیں۔ سندھ حکومت کا یہ فیصلہ گزشتہ روز ہی سندھ حکومت نے آن لائن ٹیکسی سروس بند کرنے کا فیصلے کے بعد سامنے آیا ہے۔میڈیا رپورٹس کے مطابق چیف سیکریٹری سندھ کی زیر صدارت چنگچی رکشوں سے متعلق اجلاس منعقد ہوا۔چیف سیکریٹری کا کہنا تھا کہ چنگچی رکشے لائسنس اور فٹنس کے بعد سڑک پر چل سکیں گے، سپریم کورٹ کے احکامات پر رکشوں کی رجسٹریشن شروع کردی ہے۔چیف سیکریٹری نے کہا کہ چنگچی رکشوں کا راستہ ماس ٹرانزٹ اور اہم شاہراہوں کو متاثر نہیں کرے گا۔سیکریٹری ٹرانسپورٹ نے بتایا کہ شہر میں 6 راستوں پر چنگچی رکشوں کی اجازت دی گئی ہے۔رکشوں کا روٹ یو پی سے خواجہ اجمیر نگری، ناگن چورنگی سے اقرا یونیورسٹی نارتھ کیمپس، بکرا منڈی سے لی مارکیٹ، بکرا منڈی سے منگھو پیر روڈ، 2 منٹ چورنگی سے نارتھ کراچی 6 نمبر، اور ناگن سے گودھرا موڑ رکھا گیا ہے۔اجلاس میں چنگچی رکشوں پر فیئر میٹر کی تنصیب لازمی قرار دی گئی۔

واضح رہے کہ گزشتہ روز وزیر ٹر انسپورٹ سندھ اویس شاہ نے کہا تھا کہ حکومت سندھ نے آن لائن ٹیکسی سروس بند کرنے کا فیصلہ کیا ہے، آن لائن ٹیکسی نے سندھ حکومت سے اجازت نہیں لی۔اویس شاہ کا کہنا تھا کہ آن لائن ٹیکسی سروس والے حکومت سندھ کی کوئی بات نہیں مان رہے، آن لائن موٹر سائیکل سروس بند کرنے پر بھی غور کر رہے ہیں۔

- Advertisement -

You might also like

- Advertisement -