سی پیک کا پہلا مرحلہ مکمل، دوسرے مرحلے میں مغربی روٹ پرکام تیزکرنےکا فیصلہ

چائنا پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) منصوبے کا پہلا مرحلہ مکمل ہوگیا۔ 

ریڈیو پاکستان کے مطابق اسلام آباد میں چین کے وزیر ٹرانسپورٹ کی سربراہی میں وفد نے وفاقی وزیرِ مواصلات مراد سعید سے ملاقات کی۔ 

ملاقات میں فیصلہ کیاگیا کہ دوسرے مرحلے میں مغربی روٹ پر 1270کلومیٹر طویل شاہراہیں تعمیر کی جائیں گی اور یہ شاہراہیں گلگت سے چترال اور ڈیرہ اسماعیل خان سے ژوب تک تعمیر  کی جائیں گی۔

اس موقع پر چین کے وزیر ٹرانسپورٹ نے کہاکہ چین پاکستان اقتصادی راہداری سے دونوں ممالک کے مستقبل کی نسلیں مستفید ہوں گی۔ 

پاکستان اور چین کے درمیان ٹرانسپورٹ انفراسٹرکچر پر جوائنٹ ورکنگ گروپ کا بھی اجلاس ہوا — فوٹو: ریڈیو پاکستان

اس موقع پر وفاقی وزیر برائے مواصلات مراد سعید کا کہنا تھا کہ کہ راہداری منصوبے کی تکمیل کی راہ میں حائل ہر قسم کی رکاوٹ دور کرنا حکومت کی ترجیح ہے، سی پیک سے روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے جبکہ بنیادی ڈھانچے اور معیشت کو فروغ ملے گا۔

انہوں نے کہا کہ چین، اقتصادی ترقی اور غربت کے خاتمے کے حوالے سے ایک عملی نمونہ ہے۔

اس سے قبل پاکستان اور چین کے درمیان ٹرانسپورٹ انفراسٹرکچر پر جوائنٹ ورکنگ گروپ کے اجلاس  کے اختتام پر متفقہ نکات پر وزارت مواصلات میں دستخط کیے گئے۔ 

پاکستان کی جانب سے وفاقی سیکریٹری مواصلات جواد رفیق ملک اور چین کی طرف سے چین کی وزارت ٹرانسپورٹ کے چیف پلانر وانگ ژی چنگ نے دستخط کیے۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں