ترکی نے شمالی شام میں کردوں کیخلاف آپریشن 5 روز کیلئے معطل کردیا

ترکی شمالی شام میں جاری کرد ملیشیا کے خلاف آپریشن 5 روز کیلئے روکنے پر رضا مند ہوگیا۔

غیر ملکی میڈیا کے مطابق ترکی کے دارالحکومت انقرہ میں موجود امریکی نائب صدر مائیک پنس نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ امریکا اور ترکی نے شام میں جنگ بندی پر اتفاق کیا ہے۔

مائیک پنس کے مطابق ترکی کی افواج  آپریشن بہار امن (پیس اسپرنگ) کو 5 روز (120 گھنٹے)کیلئے روکنے پر راضی ہوگئی ہیں تاکہ اس دوران شامی کرد ملیشیا (وائے پی جی) اس علاقے سے نکل جائے جسے ترکی سیف زون بنانا چاہتا ہے۔

نائب امریکی صدر کا کہنا تھا کہ جنگ بندی کے دوران آپریشن بہار امن مکمل طور پر معطل رہے گا اور اس دوران کسی قسم کی عسکری کارروائی نہیں کی جائے گی۔

مائیک پنس کا تھا کہ آپریشن معطل ہونے کے بعد ترکی پر مزید کوئی پابندی نہیں لگائی جائے گی جب کہ آپریشن ختم ہونے کے بعد ترکی پر لگائی گئی پابندیاں بھی اٹھالی جائیں گی۔

اس سے قبل مائیک پنس نے ترکی کے صدر رجب طیب اروان سے انقرہ میں تقریباً دو گھنٹے ملاقات کی اور شام میں جاری آپریشن سمیت مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا۔

ڈونلڈ ٹرمپ کا آپریشن روکنے کا خیر مقدم

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں ترکی کی جانب سے آپریشن روکنے کا خیر مقدم کرتے ہوئے ترک صدر رجب طیب اردوان کا شکریہ ادا کیا ،اُن کا کہنا تھا کہ اب لاکھوں افراد کی جانیں محفوظ ہوجائیں گی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں